پاکستانیوں کا رہن سہن اور عالمی طاقت پاکستان

0
تھورھونگ چیانگ کی
تھورھونگ چیانگ کی "وبا "سے بچنے کی کہانی

پاکستانیوں کا رہن سہن اور عالمی طاقت پاکستان
پاکستانیوں خصوصا نوجوانوں کو اپنا طرز زندگی بدلنا ہوگا ۔ معاشرہ اس وقت جمود کا شکار ہے-( بظاہر معاشعرہ آزاد ہے) مگر حقیقت میں موبائل (سوشل میڈیا) کی قید میں آ چکا ہے دو سال اور اس سے اوپر کے پاکستانیوں اس میں قید ہوئے کافی عرصہ ہو چکا ہے
فجر کی نماز کے وقت تمام پاکستانی (غیر مسلم بھی) اٹھیں اپنے مذہب کے مطابق عبادت کریں ورزش کرنے کے بعد اپنے اپنے کاموں پر چلے جائیں
اب اپنے کام کو ایمانداری کے ساتھ کرنے پر ہی مطلوبہ نتائج نکل سکتے ہیں
کیا ٹریفک سارجنٹ اپنا کام کرمکمل طور پر کر رہا ہے؟ موٹر سائکل اور دیگر گاڑیوں والے ڈرائیور حضرات قانون کے مطابق ڈرائیو کر رہے ہیں ؟ اساتزہ کرام اپنا کام ٹھیک کر رہے ہیں ؟ سرکاری محکموں کے ملازم اپنا فرض بخوبی سر انجام دے رہے ہیں؟ طالب علم اپنی نصابی اور غیر نصابی سرگرمیاں میں کہاں تک انصاف کر رہے ہیں ؟
مطالعہ کتنے فیصد پاکستانی کرتے ہیں ؟
نوجوانوں کو نئے ادارے اورنئی سوچ کو ساتھ آنا ہو گا ۔ اب تشدد کے بغیر سب کام کرنے ہوں گے – حکومت خاص طور پر دفاعی اداروں کو ایک نیا پلیٹ فارم بنانا ہو گا جیسا کہ آج سپہ سالار نے کہا ہے کہ سائبر وار یا ففتھ جنریشن جنگ شروع ہو چکی ہے – اور یہ جنگ پاکستانی قوم اپنی فوج کا ساتھ دے گی تب ہی جیتی جا سکتی ہے اور اس سے بڑھ کر قوم کو بڑی سوچ کے ساتھ تیاری کرنی ہو گی پاکستان کو عالمی طاقت بنانے میں چند سالوں کا عرصہ درکار ہے- قوم کو اپنے رہن سہن کا شیڈول بنانا ہو گا

LEAVE A REPLY