سقوط ڈھاکہ اور عالمی طاقت پاکستان

0

 

سقوط ڈھاکہ اور عالمی طاقت پاکستان
سقوط ڈھاکہ اور عالمی طاقت پاکستان

جس وقت یہ تحریر لکھ رہا ہوں سولہ دسمبر دو ہزار اٹھارہ ختم ہونے میں چند گھنٹے باقی رہ گے ہیں
آج سولہ دسمبر کیوں ہوا اور کیسے ہوا کس کی غلطی سے ہوا اور کون مجرم ہے اس سے آگے کی بات کرنی ہے کہ کیا قوم نے سوچا ہے کہ کیا پاکستان عالمی طاقت بن سکتا ہے یا کہ قوم چند نام نہاد حکمرانوں کے نعروں پر چلتی رہے گی
آج نوجوانوں کو خود متحرک ہونا ہو گا- پاکستان کو اپنے علاقے واپس لینے ہوں گے نئی سوچ اور جزبہ کے ساتھ نئی تحریکوں کو جنم دینا ہوگا یہ تحریکیں ہر صورت میں تعلیمی معیار کو بلند کرنے اور تشدد سے پاک ہونی چاہیے
پاکستانی قوم خصوصا نوجوانوں کو اپنا طرظ زندگی بدلنا ہو گا – فرقہ واریت لسانیت اور نسل سے پاک تحریک چلانی ہو گی –
سب سے بڑھ کر میرٹ بنانا ہو گا اگر ایک پاکستانی سمجھتا ہے کہ اس سے بہتردوسرا پاکستانی ایک کام کو کر سکتا ہے اور اس کا حق بھی ہے تو پہلےپاکستانی کو رضکارانہ طور پر اس کام کو چھوڑنا ہو گا
کامیابی کا معیار پیسہ نہی بلکہ صلاحیت ہو گی تب نوجوان بھی ترقی کریں گے اور ملک بھی عالمی طاقت بنے گا
تخلیقی دماغ کے حامل لوگوں کو ایک الگ پلیٹ فارم بنانا ہوگا اور عملی کام کرنے والے نوجوانوں کا پلیٹ فارم اس کو عملی جامہ پہناے
سقوط ڈھاکہ کو گزرے ہو سنتالیس سال ہو گے ہیں مگر ہم پہلے سے پیچھے چلے گیے ہیں
نوجوانوں کو وقت پر نکاح اور تخلیقی طرز پر مبنی علم حاصل کرکے ہی سقوط ڈھاکہ کے زخم کو کم کیا جا سکتا ہے اور پاکستان کو عالمی سطح پر مقام دلایا جا سکتا ہے

سنجیدہ، میرٹ پر یقین رکھنے والے، انتھک محنت اور تخلیقی صلاحیتوں کے حامل  نوجوانوں کا گلدستہ ہی پاکستان کو آگے لےکر جا سکتےہے اس شرط کے ساتھ کہ  ساری پاکستانی قوم بھی ساتھ دے

LEAVE A REPLY